Map News

حکومت بچوں کے حقوق کے تحفظ کے لئے پرعزم ہے: ریاض فتیانہ

اسلام آباد (میپ نیوز)

چائلڈ رائٹس موومنٹ (سی آر ایم) نے جمعرات کے روز مقامی ہوٹل میں ” بچوں کے حقوق سے متعلق ریاست پاکستان کے بین الاقوامی معاهدوں پر پیشرفت” کے موضوع پر میڈیا سیشن کا انقعاد کیا۔

پاکستان کی قومی اسمبلی میں قائمہ کمیٹی برائے قانون و انصاف کے چیئرمین جناب ریاض احمد فتیانہ نے کہ پاکستان کے بین الاقوامی وعدوں کے پیش نظر بچوں کے حقوق کی حالت کو بہتر بنانے کے لیے حکومت اقدامات کر رہی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان میں تقریبا 88 ملین بچے ہیں جو پاکستان کی کل آبادی کا 47٪ ہیں۔ انہوں نے اعتراف کیا کہ بدقسمتی سے پاکستان نے بچوں کے حقوق کے بارے میں اپنے بین الاقوامی اور قومی وعدوں پر عمل نہیں کیا ہے تاہم موجودہ حکومت اس صورتحال کو تبدیل کرنے کے لئے کوشاں ہے۔

انہوں نے پاکستان کے وزیر اعظم جناب عمران خان کی قوم سے پہلی تقریر کا ذکر کیا جس میں وزیر اعظم نے پاکستان میں بچوں کی صحت کی خراب صورتحال کے بارے میں بات کی تھی ۔ انہوں نے زینب الرٹ ، رسپانس اینڈ ریکوری بل ، 2020 ، احساس انڈرگریجویٹ اسکالرشپ پروگرام اور پاکستانی بچوں کے حقوق کے تحفظ کے لئے حکومت کی جانب سے اٹھائے گئے دیگر اقدامات کی بھی نشاندہی کی۔

ڈاکٹر سید صفدر رضا نے ذکر کیا کہ پالیسی سازوں کی عدم دلچسپی کے باعث ، پاکستانی بچے بقا ، تحفظ اور ترقی کے حقوق سے محروم ہیں۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان ملنیمم ڈویلپمنٹ گولز میں بچوں سے متعلق اہداف میں زائدہ تر کو پورا کرنے میں ناکام رہا اور پاکستانی بچے اب بھی خراب صحت اور غذائیت کی کمی کے مسائل کا سامنا کر رہے ہیں۔ پاکستان میں 22.84 ملین بچے اسکولوں سے باہر ہیں جو دنیا میں ان بچوں کی دوسری بڑی تعداد ہے۔ اس کے علاوہ ، بچوں کو حقوق کی فراہمی میں صنفی اور طبقاتی امتیاز میں نمایاں ہے۔

انہوں نے بتایا کہ تقریبا 12 ملین پاکستانی بچے کم عمری میں مزدوری کرتے ہیں اور ان میں سے بیشترصحت کے لحاظ سے خطرناک کاموں میں ملوث ہیں۔ اعداد و شمار میں سڑکوں پر رہنے اور کام کرنے والے 12 لاکھ سے زائد بچے بھی شامل ہیں۔ کم عمری کی شادیوں ، تجارتی اور جنسی استحصال کے لئے اسمگلنگ ، بچوں کے ساتھ جنسی استحصال میں بھی اضافہ ہورہا ہے۔ انہوں نے کہا کہ تمام سیاسی جماعتوں کو متحد ہوکر کوششیں کرنا ہوں گی بصورت دیگر پاکستانی بچوں کو تکالیف کا سامنا کرنا پڑے گا۔

سب سے زیادہ پڑھی جانے والی مقبول خبریں


دلچسپ و عجیب

سائنس اور ٹیکنالوجی

اہم خبریں

تمام اشاعت کے جملہ حقوق بحق ادارہ محفوظ ہیں۔
Copyright © 2024 Map News. All Rights Reserved